December 03, 2018
آلوک ناتھ کے خلاف مقدمہ

آلوک ناتھ کے خلاف مقدمہ

بھارت میں منی اسکرین کے مقبول اداکار آلوک ناتھ جنسی تشدد کے الزامات کے بعد سے مشکلات میں ہیں۔ اب خبر سامنے آئی ہے کہ ممبئی پولیس نے بالآخر آلوک ناتھ کے خلاف فلم ساز وِنتا نندا کی ریپ کی شکایت پر ایف آئی آر درج کر لی ہے۔ وِنتا نندا نے رواں سال اکتوبر کے مہینے میں ایک فیس بک پوسٹ میں آلوک ناتھ کے خلاف برسوں پہلے نشہ آور دوا دے کر ان کا ریپ کرنے کا الزام لگایا تھا۔ آلوک ناتھ نے ان الزامات کو مسترد کیا ہے اور ان پر ہتک عزت کا دعویٰ بھی کر رکھا ہے۔ اس میں انہوں نے وِنتا نندا سے معافی کا اور ایک روپے کے علامتی ہرجانے کا مطالبہ کیا ہے۔ حال ہی میں دو دوسری اداکاراؤں نے بھی آلوک ناتھ پر جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام لگایا ہے۔ اب اطلاعات ہیں کہ ونتا نندا کو ریپ ثابت کرنے کیلئے اپنا میڈیکل چیک اَپ کروانا پڑے گا۔
لکھاری و پروڈیوسر ونتا نندا نے صحافی برکھا دت سے خواتین کے حوالے سے ہونے والے ایک پروگرام میں بات کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ انہیں ریپ ثابت کرنے کے لیے میڈیکل ٹیسٹ سے گزرنا پڑے گا۔ ونتا نندا نے بتایا کہ اگرچہ ان کی درخواست کے تین ہفتوں بعد آلوک ناتھ کے خلاف ریپ کا مقدمہ درج کیا گیا، تاہم اب انہیں پتہ چلا ہے کہ وہ ریپ کو ثابت کرنے کے لیے میڈیکل چیک اَپ سے گزریں گی۔ ونتا نندا کے مطابق انہوں نے ایک پیپر میں پڑھا، جس میں پولیس والوں نے کہا تھا کہ ونتا نندا کو ’ریپ‘ ثابت کرنے کے لیے اب بھی یعنی 20سال گزر جانے کے باوجود میڈیکل چیک اَپ کروانا پڑے گا۔ ونتا نندا نے میڈیکل چیک اپ کے حوالے سے حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ آلوک ناتھ کے خلاف کبھی بھی مقدمہ درج نہ کرواتیں، اگر اداکار ان سے معافی مانگتے۔ ونتا نندا کا کہنا تھا کہ وہ آلوک ناتھ کے گھر بھی گئی تھیں اور ان کی اہلیہ کے سامنے ان کے شوہر کے حوالے سے بات بھی کی، تاہم آلوک ناتھ کی اہلیہ نے اپنے شوہر کے کرتوتوں پر افسوس کا اظہار کرنے کے بجائے ان پر ہی برہمی کا اظہار کیا۔ ونتا نندا کے مطابق اگر آلوک ناتھ کی اہلیہ ان کا ساتھ دیتیں اور اپنے شوہر کے خلاف ایکشن لیتیں تو وہ پولیس میں مقدمہ درج نہیں کرواتیں، تاہم وہ آلوک ناتھ کی اہلیہ کی جانب سے تعاون نہ کرنے کے بعد مقدمہ درج کروانے پر مجبور ہوئیں۔
وِنتا نندا نے 1990ء کی دہائی میں مقبول عام ٹی وی سیریل ’’تارا‘‘ میں ان کے ساتھ کام کیا تھا۔ یہ سیریل انہوں نے لکھا تھا۔ انہوں نے اپنے فیس بک پوسٹ میں یہ الزام بھی لگایا تھا کہ آلوک ناتھ نے اس سیریل کی اہم اداکارہ کو بھی جنسی طور پر ہراساں کیا تھا۔ جب سے یہ الزامات سامنے آئے ہیں، آلوک ناتھ نے ان کی سختی سے تردید کی ہے۔ ونتا نندا کے پوسٹ میں پریشان کن تفصیلات ہیں۔ وِنتا نے لکھا ’’میں ٹی وی کے نمبر ون شو تارا کی پروڈیوسر تھی۔ وہ سیریل کی اداکارہ کے پیچھے پڑا تھا لیکن اس شخص میں اس کی دلچسپی نہیں تھی۔ وہ شرابی اور بہت برا انسان تھا۔ لیکن فلم اور ٹی وی کی صنعت کا ایک بڑا اسٹار ہونے کے لیے اس کی یہ حرکتیں معاف تھیں۔ اداکارہ نے ہم سے شکایت کی تو ہم نے سوچا کہ اسے نکال دیں۔ مجھے یاد ہے کہ ہمیں اس دن آخری شاٹ لینا تھا۔ ہم اسے نکالنے والے تھے اور اس شوٹ کے بعد اسے یہ بتانے والے تھے۔ لیکن وہ شراب پی کر اپنا ٹیک دینے آیا۔ جیسے ہی کیمرا رول ہوا، اس نے اداکارہ کے ساتھ بدتمیزی کی۔ اداکارہ نے اسے تھپڑ مارا۔ ہم نے فوراً اسے شو سے جانے کے لیے کہا اور اس طرح وہ شو سے نکالا گیا۔‘‘
اپنے ساتھ ہونے والے حادثے کا ذکر کرتے ہوئے ونتا نندا نے لکھا ’’اس نے مجھے اپنے گھر بلایا۔ ہم اپنے گروپ کے ساتھ پارٹیاں کرتے تھے، لہٰذا یہ خلاف توقع نہیں تھا۔ پارٹی کی شراب میں کچھ ملایا گيا تھا۔ رات دو بجے میں نے عجیب محسوس کیا اور میں اپنے گھر کے لیے نکل پڑی۔ کسی نے مجھے گھر چھوڑنے کی پیشکش نہیں کی۔ میں تنہا پیدل اپنے گھر کے لیے چل پڑی۔ راستے میں وہ شخص مجھے ملا۔ اس نے کہا کہ وہ مجھے گھر چھوڑ دے گا۔ میں نے اس پر اعتماد کیا اور گاڑی میں بیٹھ گئی۔ اس کے بعد مجھے بس اتنا یاد ہے کہ اس نے میرے منہ میں زبردستی مزید شراب ڈالی۔ جب مجھے ہوش آیا تو میں بہت درد میں تھی۔ میرا اپنے ہی گھر میں ریپ کیا گیا تھا۔‘‘