December 03, 2018
سپر کمپیوٹرز میں کون سا ملک نمبر ون؟

سپر کمپیوٹرز میں کون سا ملک نمبر ون؟

ٹیکنالوجی کے میدان میں ترقی یافتہ ممالک میں سخت مقابلہ جاری ہے۔ اس سلسلے میں امریکا اور چین بڑے حریف ممالک ہیں جو ایک دوسرے سے بہتر ٹیکنالوجی پیش کرنے کی کوشش میں لگے رہتے ہیں۔ دنیا میں تیز ترین سپر کمپیوٹرز کی فہرست میں چین اب تیسرے نمبر پر جبکہ امریکا پہلے نمبر پر آ گیا ہے۔ تیز ترین دس کمپیوٹرز کی فہرست میں امریکا کے پانچ کمپیوٹرز ہیں جبکہ دیگر ممالک میں سوئٹزرلینڈ، جرمنی اور جاپان بھی شامل ہیں۔ فہرست میں 500 تیز ترین سپر کمپیوٹرز میں چین کے 227 کمپیوٹرز ہیں جبکہ امریکا کے 109کمپیوٹرز ہیں۔ تیز ترین سپر کمپیوٹرز کی فہرست سال میں دو بار شائع کی جاتی ہے۔
تازہ ترین فہرست کے مطابق امریکا کے دو سپر کمپیوٹرز ’سمٹ اور سیئیرا‘ پہلے اور دوسرے نمبر پر ہیں۔ رپورٹ کے مطابق امریکی سپر کمپیوٹر سمٹ دو لاکھ ٹریلین کیلکیولیشنز فی سیکنڈ کر سکتا ہے۔ سمٹ اور سیئیرا دونوں ہی کمپیوٹر کمپنی ’’آئی بی ایم‘‘ نے تیار کیے ہیں۔ چین کا سنوے ٹائی ہو لائٹ گزشتہ سال سب سے تیز ترین سپر کمپیوٹر تھا۔ تاہم اس سال کی فہرست میں یہ تیسرے نمبر پرآ گیا ہے۔ امریکی سپر کمپیوٹر سمٹ 200 جبکہ چینی کمپیوٹر سنوے ٹائی ہو لائٹ نے 93 پیٹا فلاپس تک کام کر سکتا ہے۔ سپر کمپیوٹرز کی تیزی پیٹا فلاپ میں گنی جاتی ہے۔ ایک فلاپ کو آپ کیلکیولیشنز میں ایک آپریشن یا قدم کے طور پر سمجھ سکتے ہیں۔ ایک پیٹا فلاپ کا مطلب ایک سیکنڈ میں ایک ہزار کھرب آپریشنز ہوتا ہے۔ سپر کمپیوٹرز بہت بڑے اور مہنگے سسٹمز ہوتے ہیں جن میں ہزاروں پراسیسرز کو مخصوص انداز میں اکٹھا کیا گیا ہوتا ہے اور ان سے انتہائی مخصوص کیلکیولیشنز کروائی جاتی ہیں۔ سپر کمپیوٹرز سے لیے جانے والے کاموں کی چند مثالوں میں موسمیاتی تبدیلی کے جائزے، جوہری ہتھیاروں کی سیمیولیشنز، تیل کے ذخائر کی کھوج، موسم کے حال کی پیشگوئیاں، ڈی این اے سیکونسنگ وغیرہ شامل ہیں۔