December 31, 2018
تھائی رائیڈ غدہ جسم میں کیا کام کرتا ہے؟

تھائی رائیڈ غدہ جسم میں کیا کام کرتا ہے؟

ہماری گردن کے سامنے والے حصے میں جہاں سے ہوا کی نالی گزر رہی ہے، اس ’’ونڈ پائپ‘‘ کے دونوں جانب تھائی رائیڈ غدہ(Gland) کے دو ابھرے حصے چپکے ہوتے ہیں جنہیں اسی غدے کا ایک چپٹا حصہ جسے Isthmusکہتے ہیں، جوڑے رکھتا ہے۔ ’’استھمس‘‘ ہوائی نالی کے اوپر چپکا ہوتا ہے۔ انسانی جسم میں جتنے غدود کام کررہے ہیں، تھائی رائیڈ ان میں شامل ایک بہت اہم غدہ ہے کیونکہ یہ جسم میں آکسیجن کی مقدار اور توانائی کے استعمال کو متحرک کرتا ہے جس سے جسم کےتحول غذا کی رفتار(Metabolic rate)مناسب سطح پر رہتی ہے اور ہم صحت مند اور چاق و چوبند رہتے ہیں یعنی جسم میں مناسب طور پر غذا کے انجذاب کیلئے اس غدہ کی ضرورت ہوتی ہے۔ دماغ میں جو Hypothalamus اور Pituitary غدود ہوتے ہیں، وہ ہی مجموعی طور پر تھائی رائیڈ کو کنٹرول کرتے ہیں اور جسم میں کسی قسم کی تبدیلی کی صورت میں تھائی رائیڈ کو اپنے ہارمون کی پیداوار بڑھانے یا گھٹانے پر مجبور کرتے ہیں۔ اگر تھائی رائیڈ غدود ضرورت سے زیادہ ہارمون تیار کرنے لگیں یعنی Overactive ہوجائیں تو اس کے نتیجے میں پسینہ زیادہ آتا ہے، وزن کم ہونے لگتا ہے اور گرمی زیادہ محسوس ہوتی ہے جبکہ ضرورت سے کم فعال تھائی رائیڈ کم ہارمون تیار کرتا ہے جس سے گرمی اور سردی دونوں سے حساسیت بڑھ جاتی ہے، گنج پن کی شکایت پیدا ہوتی ہے اور وزن بڑھ جاتا ہے۔ تھائی رائیڈ غدہ بلوغت کے دنوں میں پھول سکتا ہے۔ علاوہ ازیں دوران حمل، وائرس سے ہونے والے انفیکشنز یا خوراک میں آیوڈین کی کمی سے بھی تھائی رائیڈ گلینڈ سوج سکتا ہے۔ اس غدہ کے چاروں کونوں پر جو چھوٹے Parathyroids ہوتے ہیں، وہ جسم میں کیلشیئم کی سطح کو مناسب حد تک رکھتے ہیں۔ یہ حصے اس وقت ہارمونز خارج کرتے ہیں جب جسم میں کیلشیئم کی سطح کم ہوتی ہے۔ اگر کیلشیئم کی سطح بلند ہو تو تھائی رائیڈ اسے کم کرنے کیلئے Calcitonin ہارمون خارج کرتا ہے لہٰذا تھائی رائیڈ اور پیرا تھائی رائیڈ غدود باہم مل کر کام کرتے ہیں۔