January 28, 2019
حسن کی دھوپ چاندنی جیسا روپ

حسن کی دھوپ چاندنی جیسا روپ

ہم کتنی ہی دلہنوں کو دیکھتے ہیں لیکن ہر بار ان کے پرکشش روپ سے حیران ہو جاتے ہیں۔ سج دھج کے ساتھ یہ گھر کے آنگن میں قدم رکھتی ہیں تو کبھی ڈولی میں بٹھا کر ان کو گھر سے رخصت کیا جاتا ہے۔ سرخ رنگ سے سجا جوڑا، بالوں میں لگا گجرا، ان کی مخصوص پہچان ہے، اس کے باوجود ہر بار، ہر دلہن اپنی منفرد شخصیت اور پسند، لباس و انداز سے ہمیں دلچسپ حیرانی میں مبتلا کردیتی ہے۔ دلہن کا لہنگا ہو یا انارکلی، روایتی سرخی کے بجائے منفرد رنگ کا عروسی جوڑا ہو یا بنارسی اور شیفون کے ساتھ نیٹ پر زردوزی کڑھائی جھلک رہی ہو، عروسی انداز کی انفرادیت برقرار رکھنے کے لیے زیادہ محنت کی ضرورت نہیں، بس جدت، تہذیب و روایت اور فیشن ٹرینڈ کا ایک خاص امتزاج اس سلسلے میں آپ کو کامیابی سے ہمکنار کرسکتا ہے۔ آج کی دلہن جسے ماڈرن دلہن کہنا زیادہ بہتر ہوگا، روایت پر یقین رکھنے کے ساتھ ساتھ تہذیب و ثقافت کو جدت سے متعارف کروانے کا ذریعہ بھی ہیں۔ وہ نئے تجربے، نئے انداز اپنانے سے خوفزدہ نہیں، روایتی سرخ رنگ کے ساتھ آج لاتعداد رنگ عروسی جوڑے کا حصہ بن چکے ہیں تو یہ ان کے ہی ذوق کا نتیجہ ہے۔ جدت پسندی سے ہی تو برائیڈل فیشن آج پسندیدہ شعبہ بن گیا ہے، ورنہ پہلے تو سرخ رنگ کے علاوہ کوئی دوسرا رنگ شادی کے دن زیب تن کرنا ناممکن خیال کیا جاتا تھا اور آج لڑکیاں، اپنے پسندیدہ رنگ اپنانے میں بھی جھجک کا شکار نہیں ہوتیں، جامنی، نارنجی، سبز، نیلا، پیلا، سرمئی، کتھئی، سنہری، یہاں تک کہ چمکتی چاندنی جیسا سفید رنگ بھی آج برائیڈل ٹرینڈ میں شامل ہے۔
یہ کہنا مشکل ہے کہ سفید رنگ (White and Ivory Color)کے عروسی جوڑے کا ٹرینڈ کب اور کیسے شروع ہوا لیکن یہ سچ ہے کہ جب سے یہ رنگ مشرقی فیشن میں اِن ہوا ہے، برائیڈل ٹرینڈز کا انداز ہی بدل گیا ہے، طرح طرح کے ڈیزائن، امتزاج اور اسٹائل، سفید لہنگے کے ساتھ اپنائے جارہے ہیں، کوئی گلابی اور سفید رنگ کا امتزاج کررہا ہے، سرخ رنگ کے شیڈز سے سجا سفید لہنگا ہو یا سفید اور سنہری تاروں سے سجا چکن کاری لہنگا، اس سال کا سب سے مقبول برائیڈل فیشن ’’سفید لہنگا‘‘ ہے۔ اگر آپ بھی افسانوی رنگ سے سجا، چاند سا چمکتا لباس زیب تن کرنا چاہتی ہیں تو اس رنگ کو اپنالیجئے۔

سفید رنگ کی اچھی خوبی یہ ہے کہ اس کا امتزاج ہر رنگ کے ساتھ جچتا ہے، سنہری، گلابی اور سرخ تو یوں بھی شادی بیاہ کے لازمی رنگ ہیں، آپ بھی سفید رنگ کو گلابی اور سنہری رنگ کے ساتھ اپنائیے، سونے کے جڑائو زیورات اس رنگ کو مزید دلکش بنادیں گے ۔

سفید رنگ کا عروسی جوڑا، اس پر نفیس مگر بھرپور زردوزی کڑھائی، موتی، نگینے سے سجا زیور، مدھم گلابی اور سفید رنگ کا دوپٹہ، شادی کے دن سب کی توجہ آپ پر مرکوز کرنے کے لیے اور کس چیز کی ضرورت ہے؟ آپ بس چاند کی طرح چمکتے اس لباس کو اپنالیجئے، پری جیسا روپ بھی آجائے گا۔

سفید رنگ کا لہنگا اور اس کے ساتھ انگوری رنگ کا نفیس امتزاج، جس قدر منفرد ہے، اتنا ہی خوبصورت بھی۔ جب سفید لہنگا پہننا ہی ہے تو کیوں نہ اسے بھرپور دلکشی اور دلفریبی کے ساتھ اپنایا جائے؟ اس رنگ میں سرخ جیسی چمک نہیں لیکن اس کا انداز من موہنی ضرور ہے۔

سفید چولی کے ساتھ رنگین لہنگے اور دوپٹے کی بات ہو، تو چٹا پٹی لہنگے کا خیال ذہن میں آتا ہے۔ سفید اور سنہری لباس پر کاسنی اور گلابی، جامنی اور سبز ریشمی تانہ بانہ ہو، سنہری پھول جگمگا رہے ہوں، تب بنارسی چٹا پٹی کی جھلک، سفید کے ساتھ منفرد تاثر دینے میں ناکام نہیں ہوتی۔