February 11, 2019

پھول نگر کی شہزادی

پھولوں کی شہزادی گلابو پھولوں جیسی نازک اور حسین تھی۔ وہ وہاں پھولوں اور تتلیوں سے کھیلتی اور خوش رہتی۔ ایک دن معمول کے مطابق شہزادی گلابو پھول نگر کی سیر کررہی تھی۔ اچانک وہاں سے کانٹوں کے دیس کے راجا کا گزر ہوا، اس نے شہزادی گلابو کو دیکھا تو اسے وہ بہت پسند آئی اور اس نے شہزادی گلابو سے شادی کرنے کا فیصلہ کرلیا، وہ شہزادی کو اغوا کرکے کانٹوں کے دیس لے گیا، جہاں ہر طرف کانٹے ہی کانٹے تھے۔ ادھر جب شہزادی کے والدین کو یہ خبر ہوئی کہ شہزادی گلابو کو کانٹوںکا راجا اغوا کرکے لے گیا ہے تو وہ بہت پریشان ہوئے کیونکہ وہ جانتے تھے کہ کانٹوں کے دیس کا راجا بہت خطرناک ہے۔ بادشاہ نے فوراً پھول نگر میں اعلان کروایا کہ جو کوئی شہزادی کو کانٹوں کے راجا سے بچا کر لائے گا، اس کی شادی شہزادی گلابو سے کردی جائے گی۔ ساتھ ہی ساتھ اسے پھول نگر کا نیا بادشاہ بھی بنادیا جائے گا لیکن اس اعلان کے بعد کوئی ایک پھول بھی کانٹوں کے دیس جانے کی ہمت نہ کرسکا کیونکہ ہر کوئی جانتا تھا کہ کانٹوں کا راجا انتہائی ظالم اور خطرناک ہے، یہ صورت حال دیکھ کر بادشاہ اور ملکہ سخت پریشان ہوئے، تبھی ایک نوجوان پھول بادشاہ کے پاس آیا اور کہنے لگا۔ ’’میں شہزادی کو بچا کر لائوں گا۔‘‘ بادشاہ نے گردن اٹھا کر اس نوجوان کو دیکھا، جس نے اتنی بہادری سے یہ جملہ کہا تھا۔ یہ بہادر نوجوان سورج مکھی پھول تھا جو خوبصورت ہونے کے ساتھ ساتھ انتہائی بہادر بھی تھا۔ اس نے بادشاہ کو بتایا کہ وہ کانٹوں کے راجا سے مقابلہ کرے گا، کیونکہ اللہ نے اسے ایسی طاقت دی ہے، جو وہ سورج کی روشنی سے حاصل کرتا ہے اور وقت پڑنے پر اسے اپنے دشمن پر استعمال کرتا ہے۔ سورج مکھی بادشاہ کے حکم سے کانٹوں کے دیس چلاگیا، جہاں شہزادی گلابو قید تھی، وہ انتہائی افسردہ حال تھی، کانٹوں کے راجا نے جب سورج مکھی کو دیکھا تو فوراً اپنے کانٹوں کا جال اس پر پھینکا، لیکن سورج مکھی نے فوراً اپنی طاقت استعمال کی اور اپنی روشنی سے کانٹوں میں آگ لگادی، وہ جل کر راکھ بن گئے۔ راجا نے کئی حملے کئے لیکن سورج مکھی ہر بار انہیں جلادیتا، راجا گھبرا گیا کہ اس پر تو کسی چیز کا اثر نہیں ہورہا، وہ آگے بڑھا اور اپنا کھاردار ہاتھ سورج مکھی کے منہ کی طرف بڑھایا، سورج مکھی نے اپنے حملے سےکانٹوں کے راجا کو جلا کر راکھ کردیا، سورج مکھی نے اپنی بہادری سے شہزادی گلابو کو آزاد کروالیا، جس پر پھولوں کے دیس کے بادشاہ نے اسے اپنی سلطنت کا نیا بادشاہ مقرر کردیا اور شہزادی گلابو کی شادی سورج مکھی سے کردی گئی۔ سورج مکھی کی بہادری سے پھول نگر میں پھر سے خوشیاں لوٹ آئیں۔
پیار ے بچو! بہادر بنو، کیونکہ جیت ہمیشہ بہادری کی ہوتی ہے، جبکہ بزدلی ہمیشہ انسان کو ناکامی کی طرف لے جاتی ہے۔