February 11, 2019

ڈاکٹر بننے کا شوق

کراچی کی ایک بستی میں ایک آورش نامی لڑکی اپنے والدین کے ساتھ رہتی تھی۔ آورش کے والد شب یارڈ میں کام کرتے تھے، جس میں پرانے جہازوں کو توڑ کر لوہے وغیرہ کو باقی کاموں میں استعمال کرتے تھے۔ آورش کی والدہ لوگوں کے گھروں میں کام کرتی تھیں۔ آورش کے والد کا شوق تھا کہ میری بیٹی بڑی ہوکر بی۔ڈی۔ایس ڈاکٹر بنے۔ آورش کو بھی ڈاکٹر بننے کا بہت شوق تھا۔ ایک دن کا ذکر ہے کہ آورش کے والد اپنے باقی دوستوں کے ساتھ پرانا جہاز توڑ رہے تھے کہ اچانک جہاز میں آگ بھڑک اٹھی، جس کی وجہ سے بہت سے لوگ آورش کے والد سمیت چل بسے۔ والد کی موت کا صدمہ آورش کے لئے کسی سانحہ سے کم نہیں تھا۔ چونکہ اسے اپنے والد کا خواب پورا کرنا تھا لہٰذا اس نے اپنی محنت نہ چھوڑی۔ اس نے میٹرک کا امتحان بہت اچھے نمبروں سے پاس کیا۔ آہستہ آہستہ وقت گزرتا گیا اور آورش محنت کرتی رہی، ایک دن آورش بی۔ڈی۔ایس ڈاکٹر بن گئی۔ اس نے اپنی بستی میں بڑا سا کلینک کھول لیا۔ آج بھی کراچی کی بستی میں آورش اور آورش کی والدہ لوگوں کی خدمت کرکے ہنسی خوشی زندگی بسر کر رہے ہیں۔