تازہ شمارہ
Title Image
February 25, 2019
بیماری میں بخار کیوں ہوتا ہے؟

بیماری میں بخار کیوں ہوتا ہے؟

پہلے تو یہ جان لیں کہ بخار بذاتِ خود کوئی بیماری نہیں ہے بلکہ یہ کسی اندرونی بیماری یا انفیکشن پر ہمارے جسم کا ردّعمل ہوتا ہے، جو جسم کا درجۂ حرارت بڑھنے کی صورت میں ظاہر ہوتا ہے۔ جسم پر جب بیرونی وائرسیز، جراثیم یا دیگر ماحولیاتی عوامل حملہ آور ہوتے ہیں تو جسم کا مدافعتی نظام ان کا مقابلہ کرنے کیلئے متحرک ہوجاتا ہے اور سوزشی عناصر کو ہمارے دورانِ خون میں شامل کرتا ہے، جس سے جسم سوزش کی کیفیت محسوس کرتا ہے، یعنی بدن جلنے لگتا ہے۔ اس صورت حال میں دل کی دھڑکن تیز ہوجاتی ہے اور خون کا بہاؤ بڑھ جاتا ہے اور اس کے نتیجے میں جسمانی درجۂ حرارت بھی پہلے سے زیادہ ہوجاتا ہے۔ یہ گویا ایک ایسی کیفیت ہوتی ہے جیسے آپ کا جسم ورزش کررہا ہو۔ جس طرح ورزش کے دوران جسم گرم ہوجاتا ہے، اس حالت میں بھی جسم میں گرمی کی پیداوار بڑھ جاتی ہے اور اس کے نتیجے میں جسم میں پانی کی کمی ہونے لگتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ بخار کی حالت میں پیاس زیادہ محسوس ہوتی ہے۔ اگر آپ خدانخواستہ بیمار ہوں اور پیاس نہ بھی محسوس ہورہی ہو تو بھی پانی کا استعمال بڑھا دیں تاکہ جسم کو اپنا کام بہتر طریقے سے کرنے کا موقع ملے۔