تازہ شمارہ
Title Image
March 11, 2019
حرام مغز اور اعصاب

حرام مغز اور اعصاب

دماغ سے نکلنے والا حرام مغز، اعصابی ریشوں اور ملحقہ ٹشوز کا ایک لمبا گول ڈوری جیسا مجموعہ ہوتا ہے، جو ریڑھ کی ہڈیوں کے درمیان سے گزرتا ہے۔ یہ حرام مغز ہی ہے جو جسم کے تقریباً تمام حصوں کو دماغ سے جوڑتا ہے اور اسی حرام مغز اور دماغ سے مل کر ہمارا مرکزی اعصابی نظام تشکیل پاتا ہے۔ انسانی حرام مغز ایک انتہائی پیچیدہ ڈھانچہ ہے، جو بے شمار اعصابی خلیات اور معاون حفاظتی ٹشوز پر مشتمل ہے۔ حرام مغز 31 مختلف حصوں میں تقسیم ہوکر دماغ کے نیچے سے پہلے اور دوسرے Lumbar Vertebrae کے درمیان 43 سے 45 سینٹی میٹر تک پھیلا ہوتا ہے۔ اگرچہ اس کا تعلق دماغ سے ہی ہوتا ہے لیکن حرام مغز کے درمیان میں سفید اور بھورا مغز (White and grey matter) دونوں موجود ہوتے ہیں۔ سفید مغز Axon اعصابی خلیات پر مشتمل ہوتا ہے، جس کے اردگرد چکنائی اور خون کی نالیاں ان کی حفاظت کیلئے ہوتی ہیں۔ بھورا مغز Dendrites اور Glial خلیات نیز مزید اعصابی خلیات پر مشتمل ہوتا ہے۔ حادثات میں اگر ریڑھ کی ہڈی کو شدید چوٹ لگے تو حرام مغز زخمی ہوسکتا ہے۔ عموماً جب ریڑھ کی ہڈیوں کے درمیان کی گول ٹکیاں (Discs) اور مہرے شدید ضرب سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوتے ہیں تو ان سے حرام مغز بھی پھٹ یا کٹ سکتا ہے۔ ایسی صورت میں جسم کے مختلف اعضا بے حس ہوسکتے ہیں اور متاثرہ شخص مفلوج اور معذور ہوسکتا ہے، اس لئے دماغ کے ساتھ ریڑھ کی ہڈیوں کی حفاظت پر بھی خصوصی توجہ دینی چاہئے، جن کے درمیان میں حرام مغز ہوتا ہے۔