تازہ شمارہ
Title Image
March 11, 2019

قرآن و سنت

غریبوں کی مدد کی نیت سے  سیونگ اکائونٹ میں رقم رکھنا سوال:میرا ایک بینک میں کرنٹ اکائونٹ ہے جس میں مجھے سود نہیں ملتا۔ میرے ایک دوست نے مشورہ دیا کہ میں اس رقم کو سیونگ اکائونٹ میں جمع کرا دوں اور جو منافع ملے، اسے کسی غریب مستحق کو دے دوں تو کیا ایسا کرنا جائز ہے؟ (محمد فیصل صدیقی … کراچی) جواب:بینک میں حفاظت یا تجارتی لین دین کی وجہ سے کرنٹ اکائونٹ میں رقم رکھی جاسکتی ہے، سود حاصل کرنے کی نیت سے رقم رکھنا درست نہیں ہے۔ اگرچہ یہ نیت ہو کہ سود کی رقم محتاجوں اور غریبوں کو دے دی جائے گی۔ کرنٹ اکائونٹ میں رقم کی حفاظت بھی ہوسکتی ہے اور تجارتی لین دین بھی، اس کے باوجود اس میں سے رقم نکال کر سیونگ اکائونٹ میں رکھنے کا بظاہر مقصد یہی ہے کہ اس رقم پر سود حاصل کرنے کے لئے یہ صورت اختیار کی جارہی ہے لہٰذا حفاظت کی خاطر جس طرح رقم رکھی گئی ہے، اسی پر قائم رہنا چاہئے۔ سود حاصل کرنے کی کوشش نہ کی جائے، البتہ اگر کسی کے پاس سود کی رقم موجود ہو تو وہ رقم غریبوں اور محتاجوں کو بلا نیت ثواب دے دینا چاہئے، مگر سود حاصل کرنے اور اسے غریبوں پر خرچ کرنے کے ارادے سے سیونگ اکائونٹ میں رقم رکھنا جائز نہیں ہے۔  زندہ لوگوں کو ایصال ثواب کرنا سوال:کیا جس طرح میت کو ایصال ثواب کیا جاتا ہے، اسی طرح اگر کوئی شخص اپنے زندہ والدین کو ایصال ثواب کرے تو ایسا کرنا درست ہوگا؟ اور کیا ان کو ثواب پہنچے گا؟ (محمد صدیق …جھنگ) جواب:جی ہاں! میت کے ساتھ ساتھ زندہ لوگوں کو بھی ایصال ثواب کیا جاسکتا ہے۔ ثواب پہنچانے کے لئے مُردوں کی تخصیص نہیں ہے، زندہ لوگوں کو بھی ثواب پہنچتا ہے، البتہ مُردوں کے لئے خاص اہتمام اس لئے کیا جاتا ہے کہ وہ خود عمل کرنے سے قاصر ہیں۔ جنازے کے ساتھ بلند آواز  سے کلمہ شہادت پڑھنا سوال:کیا جنازے کے ساتھ بلند آواز سے کلمۂ شہادت پڑھنا درست ہے؟ (عمران اسحاق … کراچی) جواب:جنازے کے ساتھ بلند آواز سے ذکر کرنا یا قرآن مجید کی تلاوت کرنا مکروہ ہے اور اگر کوئی شخص ذکر کرنا چاہے تو دل میں ذکر کرے ورنہ خاموش رہے۔ نماز جنازہ کے لئے تیمم کرنا سوال:اگر جنازے کی نماز کے لئے صفیں تیار ہیں اور کسی شخص کو وضو کرنا ہے، اگر وہ وضو کرتا ہے تو نماز جنازہ فوت ہوجائے گی تو کیا ایسی صورت میں تیمم کرسکتا ہے؟ جبکہ پانی بھی قریب میں موجود ہو۔ (خرم ضیاء … ہری پور) جواب:نماز جنازہ کے لئے ایسے وقت تیمم کیا جاسکتا ہے کہ جنازے کی نماز ہونے لگے اور لوگ انتظار نہ کریں تو ایسی حالت میں وہ تیمم کرکے نماز جنازہ ادا کرسکتا ہے۔ لیکن اگر لوگ انتظار کرسکتے ہوں تو ایسی صورت میں وضو کرنا ضروری ہے۔ فارمی مرغیوں کی خوراک اور گوشت کا حکم سوال:ہمارے یہاں فارمی مرغی کا استعمال بہت عام ہے اور فارمی مرغی کو جو غذا کھلائی جاتی ہے، اس میں مختلف قسم کے مردار جانوروں کا خون اور دوسرے بعض اعضاء اور دوائیں وغیرہ ملاکر مرغیوں کی غذا تیار کی جاتی ہے۔ کیا اس قسم کی خوراک مرغیوں کو کھلانا اور اس خوراک کی خرید و فروخت کرنا درست ہے؟ نیز اس خوراک سے بنی ہوئی مرغیوں کے گوشت کا کیا حکم ہے؟ (محمد طاہر … کراچی) جواب:مرغیوں کو بھی حلال اور پاکیزہ غذا کھلانا چاہئے۔ مردار جانوروں کا خون اور دوسری ناپاک اور حرام اشیاء مرغیوں کو کھلانا شرعاً جائز نہیں ہے نیز اس قسم کی غذا کی خرید و فروخت بھی جائز نہیں ہے۔ البتہ گوشت کی حرمت کیلئے یہ شرط ہے کہ ناپاک اور حرام غذا کی وجہ سے گوشت میں بدبو پیدا ہوجائے لیکن عام طور پر چونکہ گوشت بدبودار نہیں ہوتا، اس لئے فارمی مرغیوں کا گوشت استعمال کرنا جائز اور حلال ہے۔  چوتھی رکعت میں بھولے سے سلام پھیرنا سوال:میری عصر کی نماز میں ایک رکعت فوت ہوگئی اور چوتھی رکعت پر جب امام صاحب نے سلام پھیر دیا تو میں نے بھی بھول کر دونوں طرف سلام پھیر دیا، پھر یاد آیا کہ ایک رکعت چلی گئی تھی تو میں نے چھوٹی ہوئی رکعت ادا کی اور سلام پھیر دیا تو ایسی صورت میں سجدۂ سہو لازم ہوگا یا نہیں؟ اور اگر صرف ایک طرف سلام پھیرا اور پھر کھڑے ہوکر نماز مکمل کرلی تو کیا اس صورت میں بھی سجدۂ سہو لازم ہوگا؟ (سجاد آرائیں … کنری) جواب:اگر کسی شخص نے بھول کر ایک طرف سلام پھیرا یا دونوں طرف، اگر امام کے ساتھ ہی سلام پھیرا تھا تو یاد آنے پر فوراً اٹھ جائے۔ اس صورت میں سجدۂ سہو لازم نہیں، اس لئے کہ مقتدی ہے اور مقتدی پر اس کی غلطی کی وجہ سے سجدۂ سہو لازم نہیں آتا اور اگر امام کے سلام پھیرنے کے بعد اس نے ایک طرف یا دونوں طرف سلام پھیرا ہے تو سجدۂ سہو لازم ہے، اس لئے کہ یہ سلام انفرادی حالت میں پھیرا ہے لیکن اکثر یہ ہوتا ہے کہ امام کے بعد ہی مقتدی سلام پھیرتا ہے اور اس صورت میں سجدۂ سہو لازم ہوگا۔ غصب شدہ زمین کی آمدنی کا حکم سوال:ایک شخص نے کسی کی زمین غصب کرلی اور اس زمین پر کاشتکاری سے حاصل منافع سے مالدار ہوگیا تو آیا ایسے شخص پر زکوٰۃ، حج، قربانی وغیرہ واجب ہے یا نہیں؟ اور ایسا شخص اگر کسی کی دعوت کرے تو اس کی دعوت کوقبول کرنا کیسا ہے؟  ( عمران نذیر…خان پور) جواب: اگر کسی نے دوسرے کی زمین غصب کرنے کے بعد اس پر کچھ کاشت وغیرہ کی تو وہ کھیتی اور اس سے حاصل منافع غاصب کی ملک میں داخل ہوجائے گا۔ اگرچہ ملک حرام ہے اور پیداوار سے حاصل شدہ منافع اگر مقدار نصاب کو پہنچ جائے تواس کے ذمہ زکوٰۃ، حج، قربانی وغیرہ سب فرض ہوجائیں گے۔ زمین اور اس کے استعمال کرنے کی اجرت جوعرفاً زمیندار کاشتکاروں سے لیتے ہیں، اصل مالک کو لوٹانا واجب ہے، نیز اس سے معافی مانگنا بھی واجب ہے کیونکہ اس نے بغیر اجازت اس کی زمین کو استعمال کیا، جب تک غصب کرنے والا ایسا نہ کرے، دوسرے لوگوں کواس کی آمدنی سے دعوت قبول کرنا حرام ہے۔ نماز میں کپڑوں اور بدن سے کھیلنا سوال:اگر کوئی شخص نماز کی حالت میں بلا ضرورت اپنے جسم کے کسی حصے پرہاتھ پھیرتا ہے یا اپنے کپڑوں کو درست کرتا ہے تو کیا اس سے نماز پر کچھ فرق پڑتا ہے؟ ( محمد یونس فاروقی) جواب:نماز کو نہایت خشوع وخضوع سے ادا کرناچاہیے، بلا ضرورت جسم پر بار بار ہاتھ پھیرنایا جسم کو کھجانا مکروہ تحریمی ہے۔ درمختار میں ہے کہ بلاضرورت اپنے کپڑے اور بدن سے کھیلنا مکروہ ہے۔ حدیث شریف میں اس سے منع فرمایا گیا ہے، چنانچہ حدیث شریف میں ہے کہ اللہ تعالیٰ تین چیزوں کو ناپسند فرماتے ہیں۔ (1) نماز میں کھیلنا (2)روزے میں گالم گلوچ کرنا(3) قبرستان میں ہنسنا اور یہ افعال مکروہ تحریمی ہیں اور ایسے عمل کو عمل کثیر کہتے ہیں کہ اس کو دیکھنے والا یہ سمجھے کہ یہ شخص حالتِ نمازمیں نہیں ہے یا جس کام کے لئے دونوں ہاتھوں کا استعمال کیا جائے وہ بھی عمل کثیر ہے اور اگر ایک ہی ہاتھ سے ایک رکن میں بار بار کوئی عمل کیا جائے تو وہ بھی عمل کثیر بن جاتا ہے اور عمل کثیر سے نماز فاسد ہوجاتی ہے۔ نماز میں کھنکھارنا سوال:اگر کوئی شخص نماز میں گلا صاف کرنے کے لئے کھنکھارے تو کیا نماز فاسد ہوجاتی ہے؟ اور کیا امام اور مقتدی کے لیے حکم برابر ہیں یا کچھ فرق ہے؟ ( محمد صدیق خان… پشاور) جواب:گلا صاف کرنے کیلئے یا بلغم دور کرنے یا آواز درست کرنے کیلئے امام اور غیر امام، مقتدی، منفرد حکم میںسب برابر ہیں۔ اس سے نماز فاسد نہیں ہوتی ہے۔ البتہ بلا ضرورت کھنکھارنے جیسے بعض لوگوں کی عادت ہوتی ہے اور اس سے دوحروف والا لفظ ’’اح اح‘‘ نکل جائے تو نماز فاسد ہوجائے گی۔ درمختار میں ہے کہ نماز میں بلاعذر دولفظ کھنکھارنا جیسا کہ اح اح کرنا نماز کوفاسد کردیتا ہے۔ ہاں اگرعذر کی بنا پر ہوتو اس سے نماز فاسد نہیں ہوتی۔