تازہ شمارہ
Title Image
March 11, 2019
باتیں فلمی پردے کی

باتیں فلمی پردے کی

اداکارہ بابرہ شریف کے لیے پرائیڈ آف پرفارمنس کی تیاریاں کیا پاکستانی سینما گھروں میں بھارتی فلمیں بند ہوگئیں؟ ’’پروجیکٹ غازی‘‘ کی ریلیز ایک بار پھر التوا کا شکار

پاکستانی سینما گھروں میں بھارتی فلموں کی نمائش تا دم تحریر جاری تھی،اگرچہ حالیہ پاک بھارت سرحدی کشیدگی سے قبل ہی، ان فلموں کی نمائش پر پابندی کے دعوے سرکاری سطح پر سامنے آتے رہے تھے مگر لگتا ہے پاکستان میں سینما مالکان کی مضبوط لابی اپنے کاروباری مفادات بچانے میں ہمیشہ کی طرح اس بار بھی کامیاب ہو گئی ہے،اس حوالے سے حکومتی سطح پر کسی قسم کی کوئی پالیسی سامنے نہیں آسکی کہ جس طرح بھارت نے اپنی نئی فلموں کی نمائش کے حقوق سے پاکستانی فلم ڈسٹری بیوٹرز کو انکار کیاہے۔کیا اس طرح پاکستانی سینما مالکان بھی کوئی لائحہ عمل تیار کریں گے،اس حوالے سے بھی کسی قسم کی کوئی پالیسی سینما مالکان کی جانب سے واضح نہیں ہوسکی۔ اس وقت پاکستانی سینما گھروں میں گلی بوائے سمبا سمیت دیگر بھارتی فلموں کی نمائش کا سلسلہ بنا کسی تعطل کے جاری ہے،پاکستان میں بھارتی ٹی وی ڈراموں اور شوز پر پابندی ہے،البتہ سینما گھروں پر بھارتی فلمیں چل رہی ہیں ‘ سینما مالکان نئی فلموں کے حصول کے لیے کوشاں ہیں،کیونکہ پاکستانی فلموں کی پروڈکشن انتہائی کم ہے، جس کے باعث سینما مالکان اپنے سینما گھروں پر بھارتی فلموں کو چلا کر سینما گھروں کو بحال رکھنے میں گزشتہ کئی سالوں سے متحرک تھے،تاہم اب بھارت کی جانب سے نئی فلموں پر پابندی سے سینما مالکان پر یشان نظر آتے ہیں۔ پاکستانی فلمی صنعت کے اُن حلقوں کو، جو پاک بھارت سرحدی کشیدگی سے پہلے بھی پاکستانی سینما گھروں میں بھارتی فلموں کی نمائش کے مخالف تھے، یہ خدشہ ہے کہ اگر ان سطور کی اشاعت تک حالات کو دیکھتے ہوئے بھارتی فلموں کی نمائش بند بھی ہوگئی تو سینما انڈسٹری کے کرتا دھرتا افراد جلد یا بدیر ایک بار پھر سرحدی کشیدگی کم ہوتے ہی بھارتی فلموں کی نمائش ہمارے سینما گھروں میں خاموشی سے شروع کردیں گے۔ پاکستان فلم انڈسٹری کی قابل قدر اور مقبول اداکارہ بابرہ شریف کو 14 اگست 2019ء کو پرائڈ آف پرفارمنس دیا جائے گا۔اس کا باقاعدہ اعلان 23 مارچ کو کیا جائے گا۔بابرہ شریف کو سرکاری سطح پر ایوارڈ اُن کی فنی خدمات کے اعتراف میں دیا جارہا ہے۔بابرہ شریف 70،,80 اور 90 کی دہائی کی مقبول پاکستانی اداکارہ شمار کی جاتی ہے۔بے شمار فلموں میں بابرہ شریف نے یادگار کردار ادا کئے جس میں ’’میرا نام ہے محبت‘ زندگی‘ صائمہ‘ شبانہ‘ تلاش‘ مکھڑا‘ سلاخیں‘ ضد‘ کندن‘ پلکوں کی چھائوں میں‘ بے قرار‘ مس بنکاک‘ مس کولمبو‘ مس ہانگ کانگ‘ شمع‘ بارش‘ ایک دن بہو کا‘ شانی ٹینا‘ خدا اور محبت‘‘ اور دیگر شامل ہیں۔ واضح رہے کہ باہرہ شریف نے ٹی وی ڈراموں سے اپنے فنی کیریئر کا آغاز کیا تھا‘ ہدایت کار ایس سلیمان کی فلم ’’بھول‘‘ اُن کی پہلی ریلیز فلم تھی۔جس میں بابرہ شریف کے ہیرو اداکار منور ظریف تھے‘ انہیں شباب کیرانوی کی فلم ’’میرا نام ہے محبت‘‘ سے شہرت حاصل ہوئی۔فنی کیریئر میں متعدد نگار ایوارڈز اور دیگر اعزازت انہیں مل چکے ہیں۔اداکار شاہد سے انہوں نے اپنے فلمی کیریئر کے عروج میں شادی کی تھی جو ناکام ثابت ہوئی۔ بابرہ شریف کا ایک کریڈٹ یہ بھی ہے کہ وہ پاکستان کی پہلی اداکارہ ہیں جو ماڈلنگ سے فلموں کی طرف آئیں۔ وہ 70ء کی دہائی میں واشنگ پاؤڈر کے ایک ٹی وی کمرشل سے منظرعام پر آئیں اور راتوں رات شہرت کی بلندیوں پر پہنچ گئی تھیں۔ پاکستانی انٹرٹینمنٹ انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی شخصیات اور مداح اکثر و بیشتر عید کے موقع پر ریلیز ہونے والی فلموں کے درمیان مقابلے پر اپنی مایوسی کا اظہار کرتے ہیں اور ایسا ہی کچھ رواں ماہ 22؍ مارچ کیلئے بھی خیال کیا جارہا تھا۔ 22 ؍مارچ کو پاکستان کی تین بڑی فلمیں ’پروجیکٹ غازی‘، ’لال کبوتر‘ اور ’شیردل‘ ایک ساتھ سینما گھروں میں نمائش کے لیے پیش کی جارہی تھیں تاکہ 23 ؍مارچ کو ہونے والی چھٹی کا فائدہ یہ تینوں فلمیں اٹھا سکیں۔ فلموں میں مدمقابل ریلیز ہونے کا سب سے زیادہ اثر ان کے بزنس پر پڑتا ہے، جو کمائی اکیلے ریلیز ہوکر ایک فلم کما لیتی، وہ پھر ان تمام فلموں کے درمیان بٹتی ہے۔ اس قسم کا مقابلہ پاکستانی سینما کے لیے اس وقت نقصان دہ بھی ثابت ہوسکتا ہے کیوں کہ پاکستانی فلمی انڈسٹری طویل سالوں بعد اب دوبارہ اپنے پیروں پر کھڑی ہو رہی ہے اور اس ہی مقابلے اور نقصان سے بچنے کے لیے فلم ’پروجیکٹ غازی‘ کے پروڈیوسرز نے اس کی ریلیز کی تاریخ تبدیل کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ فلم پروڈیوسرز نے سوشل میڈیا پر اعلان کیا کہ انہوں نے پاکستانی سینما کو سپورٹ کرتے ہوئے فلم ’پروجیکٹ غازی‘ کو 22 ؍مارچ کے بجائے 29؍ مارچ کو ریلیز کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ فیس بک پر شیئر کردہ اپنی پوسٹ میں پروڈیوسرز نے فلم ’شیردل‘ اور ’لال کبوتر‘ کا اچھی کمائی کرنے کی توقعات بھی ظاہر کی۔ خیال رہے کہ فلم ’پروجیکٹ غازی‘ کو اس سے قبل 2017ء جولائی میں ریلیز کرنے کا ارادہ کیا گیا تھا، تاہم اس کی ریلیز سے ایک رات قبل فلم کا پریمیئر کراچی میں منعقد کیا، جس کے بعد اس ہی رات اس کی ریلیز ملتوی کرنے کا فیصلہ سامنے آگیا۔  فلم کے پریمیئر پر موجود ناظرین نے ساؤنڈ اور فلم کی ایڈیٹنگ کی شکایت کی، جبکہ فلم کی کہانی بھی نامکمل نظر آئی۔ پریمیئر کی رات فلم کے آغاز کے 20 منٹ بعد ہی مرکزی اداکار ہمایوں سعید سینما ہال چھوڑ کر وہاں سے چلے گئے۔ گزشتہ ماہ اس فلم کا فائنل ٹریلر بھی ریلیز کیا گیا تھا، جس کے بعد مداحوں نے امید ظاہر کی کہ اس بار فلم پہلے سے بہتر ہوگی۔ 2015ء میں بنائی گئی کامیاب پاکستانی فلم ’’رانگ نمبر‘‘ کے سیکوئل ’’رانگ نمبر 2‘‘ کی تیاری جاری ہے۔ فلم عیدالفطر کے موقع پر ریلیز کی جائے گی۔ میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے فلم ’رانگ نمبر 2‘ کے پروڈیوسر حسن ضیاء کا کہنا تھا کہ رانگ نمبر کا سیکوئل پہلے پارٹ سے بالکل مختلف ہوگا۔ فلم میں پہلے کے مقابلے میں نئے کردار نظر آئیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ اداکارہ نیلم منیر اور سمیع خان نے منفرد طریقے سے اپنا کردار نبھایا ہے۔ یہ فلم نیلم منیر اور سمیع خان دونوں کی دوسری فلمیں ہیں۔ اس سے قبل ڈرامے ’ایسی ہے تنہائی‘ سے شہرت حاصل کرنے والے سمیع خان 2004ء میں فلم ’سلاخیں‘ میں کام کرچکے ہیں جبکہ اداکارہ نیلم منیر 2017ء میں مزاحیہ فلم ’چھپن چھپائی‘ میں اپنا ڈیبیو کیا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ فلم کی شوٹنگ سندھ کے شہر ڈی جی کوٹ، سکھر، حیدرآبار اور کراچی میں کی گئی ہے۔ فلم دیکھنے کے لئے آنے والوں کو پیغام دیتے ہوئے حسن ضیاء کا کہنا تھا کہ لائٹ ہارٹڈ سی فلم ہے، اس کا مقصد یہ ہے کہ شائقین ہنستے ہوئے آئیں اور ہنستے ہوئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ فلم رومانس اور کامیڈی سے بھرپور ہے، جس میں ایسے کردار ہیں جو ہماری سوسائٹی کی عکاسی کرتے اور ہمارے آس پاس موجود ہوتے ہیں۔ فلم ’رانگ نمبر 2‘ عیدالفطر کے موقع پر ریلیز کی جائے گی، تاہم اسی دوران فلم ’مولا جٹ‘ بھی بڑے پردے کی زینت بنے گی۔ اس حوالے سے حسن ضیاء کا کہنا تھا کہ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ کتنی فلمیں ایک ساتھ ریلیز ہو رہی ہیں۔ 2015ء میں ’رانگ نمبر‘ کے ساتھ بولی وڈ فلم ’بجرنگی بھائی جان‘ اور پاکستانی فلم ’بن روے‘ ایک ساتھ ریلیز ہوئی تھیں، پھر بھی ہماری فلم کامیاب رہی۔ یاسر نواز کی ہدایتکاری میں بننے والی فلم ’رانگ نمبر2‘ کی کہانی انہوں نے اپنے بھائی دانش نواز کے ساتھ مل کر لکھی جبکہ مکالموں پر احمد حسن نے بھی کام کیا ہے۔ فلم میں ٹی وی اور فلم کی معروف اداکارہ نیلم منیر، سمیع خان مرکزی کردار ادا کر رہے ہیں جبکہ دیگر کاسٹ میں یاسر نواز، دانش نواز، محمود اسلم، نیّر اعجاز اور جاوید شیخ شامل ہیں۔