تازہ شمارہ
Title Image
March 11, 2019

ستارے کیا کہتے ہیں

حوت عورت اور جوزا مرد حوت عورت اپنی محبت اور شادی کو اختلافات اور پریشانیوں سے محفوظ رکھنے کیلئے ہر ممکن کوشش کرتی ہے، وہ اپنے جوزا شوہر کے رنگ میں رنگ جاتی ہے اور اسے خوش رکھتی ہے۔ خواہ اس کی آزادی نسواں کی پرستار سہیلیاں اس کا کتنا ہی مذاق کیوں نہ اڑائیں اور خواہ اس کے ساتھ واضح طور پر اظہار ہمدردی ہی کیوں نہ کریں لیکن حوت عورت صرف مسکرا کر نظر انداز کر دے گی لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ حوت عورت جوزا مرد کی غلام بن کر رہ جاتی ہے، یہ تو اس کے اظہارِ محبت کا ایک انداز ہوتا ہے۔ دونوں کی رفاقت کامیاب ثابت ہوتی ہے۔ حوت عورت جوزا مرد کی اطاعت شعاری میں خوشی محسوس کرتی ہے اور بہت سی باتیں اور کام جو وہ دل سے پسند بھی نہیں کرتی، محض جوزا مرد کی خوشنودی کی خاطر اس کے سامنے کرتی ہے۔ البتہ جوزا مرد کی عدم موجودگی میں اپنی پسند کے کام کرتی ہے۔ جوزا مرد وقت کی بڑی قدر کرتا ہے اور کبھی فضول وقت گزارنا اسے پسند نہیں ہوتا، وہ ہمیشہ کچھ نہ کچھ کرنا چاہتا ہے اور ہمہ وقت مصروف رہنا اسے پسند ہوتا ہے جبکہ حوت عورت کی وقت کے بارے میں رائے بالکل مختلف ہوتی ہے۔ وہ آج کا کام کل کرنے میں برائی محسوس نہیں کرتی، وہ فارغ وقت پرسکون رہ کر بسر کرنا پسند کرتی ہے چونکہ جوزا مرد کی رفاقت میں ہر وقت اس کے دبائو میں رہتی ہے۔ لہٰذا جوں ہی فرصت کے لمحات میسر آتے ہیں، وہ آرام کرنا چاہتی ہے اور وقت کا بہترین مصرف آرام کو قرار دیتی ہے۔ جوزا مرد کی جو خوبیاں محبت کے ابتدائی دنوں میں حوت عورت کو متاثر کرتی ہیں اور جن کی بدولت وہ جوزا مرد کے قریب ہوتی ہے، آگے چل کر یہ خوبیاں اس کی نازک طبع پر گراں گزرنے لگتی ہیں۔ جوزا مرد کا ذہن حیرتوں کی آماجگاہ ہوتا ہے۔ جس سے حوت عورت مسرت محسوس کرتی ہے، اس کی قوت فیصلہ بہت تیز ہوتی ہے۔ جس سے حوت عورت فوراً متاثر ہو جاتی ہے، وہ مستعد اور سرگرم عمل ہوتا ہے۔ معمولی باتوں پر پیشہ اور رہائش تک فوراً تبدیل کر دیتا ہے۔ اس کی شخصیت حوت عورت کو پراسرار اور متاثر کن محسوس ہوتی ہے اور حوت چونکہ اسرار پسند کرتے ہیں، وہ جوزا میں کشش محسوس کرتی ہے۔ دونوں خلوت کے اچھے ساتھی ثابت ہوتے ہیں۔ دونوں کی جنسی زندگی خوشگوار اور مطمئن ہوتی ہے۔ جوزا اور حوت دراصل دونوں کی جنسی زندگی خوشگوار اور مطمئن ہوتی ہے۔ حوت عورت بھی جانتی ہے کہ جوزا مرد بہرحال اس کی ضرورت محسوس کرتا ہے۔ یہ دونوں اچھے جیون ساتھی ثابت ہوتے ہیں۔ حوت مرد اور جوزا عورت کوئی حوت مرد ایسا نہیں ہوتا جسے اپنی محبوبہ جوزا کی رفاقت میں اپنے صحیح مقام کا اندازہ نہ ہو کیونکہ جوزا عورت اسے متعدد ایسے مواقع مہیا کرتی ہے، جب وہ رفاقت محسوس کرنے لگتا ہے، دراصل ہر جوزا عورت کے دو روپ ہوتے ہیں۔ باالفاظ دیگر ایک جسم میں دو عورتیں مقید ہوتی ہیں۔ وہ پیدائشی طور پر فلرٹ ہوتی ہے، جو شخص ذرا بھی اس کا نوٹس لے، یہ اس کی طرف مائل ہو جاتی ہے، یہ لوگوں کے دل اپنی ستاروں جیسی روشن اور چمکدار آنکھوں سے بہ آسانی موہ لیتی ہے۔ اس کی عمر دراصل کبھی نہیں بڑھتی، وہ ہمیشہ تیز و طرار اور پُرکشش و نوخیز دکھائی دیتی ہے جو معمولی طعن و تشنیع پر چیخنے چلاّنے لگتی ہے اور معمولی خوشی کی باتوں پر قہقہہ لگانے لگتی ہے۔ بہرکیف حوت مرد کے ساتھ زندگی بسر کرنا اس کے لئے مشکل نہیں ہوتا، وہ زندگی کی راہیں خود متعین کرتی ہے۔ حوت مرد چونکہ صابر اور امن پسند ہوتا ہے، جوزا عورت کی ناز برداری میں پریشانی محسوس نہیں کرتا ہے۔ حوت مرد کی آنکھوں سے ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے وہ کبھی خیالوں میں گم ہو گیا ہے جب کہ جوزا کی آنکھوں سے تجسس جھلکتا ہے۔ جوزا عورت کا ذہن شیشے کی گھر کی مانند ہوتا ہے جس سے وہ زندگی پر بیک وقت تین مختلف انداز میں نظر ڈالتی ہے، وہ موڈ کی تابع ہوتی ہے، اس کا موڈ تیزی سے بدلتا رہتا ہے، اس کی شخصیت سے مستعدی اور خوش فکری جھلکتی ہے۔ حوت مرد کا ذہن ایسے مکان کی طرح ہوتا ہے جس کی کھڑکیاں تو بہت ہوتی ہیں لیکن شیشوں اور شٹرز سے محروم، جس کی وجہ سے موسمی تبدیلیاں اس پر اثرانداز ہوتی رہتی ہیں۔ حوت مرد بڑا حساس ہوتا ہے، اپنے قریبی عزیزوں اور دوستوں کے جذبات کی بہت قدر کرتا ہے، نہ تو اپنے اور نہ ہی دوستوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچانا پسند کرتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس کا بعض اوقات تیزی سے تغیرپذیر موڈ کی حامل جوزا عورت سے اختلاف بھی پیدا ہو جاتا ہے۔ جوزا عورت جسمانی اور ذہنی طور پر تند لہروں کی مانند ہوتی ہے جب کہ حوت مرد پیدائشی طور پر تھکا تھکا ہوتا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ حوت مرد اور جوزا عورت اگر رفیق زندگی ہوں تو دوسرے برجوں کے تحت پیدا ہونے والے افراد کے مقابلے میں وہ بار بار مکان تبدیل کرتے رہتے ہیں اور انہیں مکان اور محلہ تبدیل کرنے میں خوشی محسوس ہوتی ہے۔ حوت اور جوزا کی طبیعتیں ایک دوسرے سے قطعی برعکس ہوتی ہیں ،البتہ اختلاف اسی وقت شدت اختیار کرتا ہے جب دونوں میں سے کسی ایک کے والدین یا کوئی قریبی رشتہ دار بھی تکرار میں ملوث ہو جائے۔ جوزا کے مزاج کی تیزی کا اندازہ اس امر سے لگایا جا سکتا ہے کہ اگر اس کا رفیق زندگی حوت مرد کسی پڑوسی کے ساتھ رات کو دیر تک باتیں کرنے کے بعد گھر واپس آئے تو وہ اسے رات بھر دروازے سے باہر رہنے دے گی اور دروازہ نہیں کھولے گی۔ اسی طرح حوت مرد کسی کی بھی تنقید مسلسل برداشت نہیں کرتا۔ جوزا عورت چپ رہنا پسند نہیں کرتی اور ہمیشہ لوگوں کے ہجوم میں گھرے رہنا پسند کرتی ہے، وہ کبھی تنہا رہنا پسند نہیں کرتی جب کہ حوت مرد ناخوشگوار مناظر اور پریشان کن صورت حال کبھی برداشت نہیں کر سکتا۔ بہرکیف دونوں اچھے رفیق زندگی ثابت ہوتے ہیں۔ جوزا بولتی ہے لیکن حوت اس کی بات ہمیشہ نہیں سنتا۔ اسی طرح جب حوت پریشان ہوتا ہے تو ضروری نہیں کہ جوزا ہمیشہ اس کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرے لیکن اس کے باوجود دونوں ایک دوسرے سے اپنی اہمیت منوانا چاہتے ہیں۔ بہرحال ان انسانی کمزوریوں کے باوجود دونوں اچھے رفیق ثابت ہوتے ہیں۔ دونوں خلوت کے بھی اچھے ساتھی ہوتے ہیں اور مطمئن زندگی بسر کرتے ہیں۔  حوت عورت اور سرطان مرد سرطان مرد اور حوت عورت کی رفاقت عموماً بہت کامیاب ثابت ہوتی ہے، ان میں علیحدگی کی مثال بمشکل ہی ملتی ہے۔ دونوں برے اور بھلے وقت کے اچھے ساتھی ہوتے ہیں، ایک دوسرے کے ہمدرد اور مونس۔ ہر سرطان مرد کی خواہش ہوتی ہے کہ اس کی جیون ساتھی کا سلوک اس کے ساتھ ایسا ہو کہ اس میں ماں کی شفقت بھی جھلکتی ہو۔ گویا وہ بیوی کے طرزِعمل میں ممتا کی آمیزش بھی چاہتا ہے کہ اس کی بیوی نہ صرف اس سے محبت کرے بلکہ اطاعت شعار بھی ہو۔ اس کے چھوٹے چھوٹے کام مثلاً موزے اور جوتے سے لے کر کپڑے استری کرنے میں بھی کوئی پس و پیش نہ کرے اور اس کے مخالفوں سے اس کی حمایت میں مقابلہ کرے اور باہمی تکرار کی صورت میں صلح میں پہل بھی کرے۔ خوش قسمتی سے حوت عورت میں یہ تمام خوبیاں موجود ہوتی ہیں۔ وہ نہ صرف شوہر کی اطاعت شعار ہوتی ہے بلکہ غمگسار بھی ہوتی ہے اور شوہر کی خدمت کر کے خوشی محسوس کرتی ہے۔ انسانی دکھ درد سمجھنے کی جتنی صلاحیت حوت عورت رکھتی ہے، دوسری کوئی عورت نہیں رکھتی۔ البتہ وہ مقدر کی قائل ضرور ہوتی ہے، دوراندیش اور مردم شناس ہوتی ہے، اپنے جیون ساتھی سرطان کو بھی ایک نظر میں پہچان لیتی ہے اور چونکہ وہ خلیق اور ملنسار ہوتا ہے لہٰذا زیادہ سے زیادہ اس کے قریب رہنا چاہتی ہے۔ سرطان مرد کا موڈ عموماً اس پیر اور جمعہ کو خراب رہتا ہے جب چاند تبدیل ہوتا ہے کیونکہ اس برج کا حاکم سیارہ قمر ہوتا ہے، ان ایام کے علاوہ سرطان مرد عموماً خوشگوار موڈ میں رہتا ہے۔