تازہ شمارہ
Title Image
March 11, 2019
شوبز کے آسمان پر نوٹوں کی بارش بڑے ستارے بڑے معاوضے

شوبز کے آسمان پر نوٹوں کی بارش بڑے ستارے بڑے معاوضے

پاکستان شوبز انڈسٹری دن دگنی رات چگنی ترقی کر رہی ہے۔ اس کا منہ بولتا ثبوت بڑے بجٹ کے ڈرامے اور بین الاقوامی معیار کی فلمیں ہیں۔ ہر سال گزشتہ برس کے مقابلے میں انٹرٹینمنٹ انڈسٹری کے لیے پہلے سے بہتر ہوتا ہے کیوں کہ پاکستانی فلمیں اب باقاعدگی سے ریلیز ہورہی ہیں اور اپنی حریف انڈسٹری بولی وڈ کا بھی ڈٹ کر مقابلہ کر رہی ہیں۔ گزشتہ دنوں سرحدی کشیدگی کے بعد بھارتی فلم سازوں نے پاکستان میں اپنی فلمیں ریلیز نہ کرنے کا اعلان کیا تھا۔ تاہم پاکستانیوں کو بھارتی فلموں کی اب خاص ضرورت بھی نہیں رہی، کیوں کہ ہمارے فلم ساز ہر طرح کی فلمیں بنانے لگے ہیں۔ گو کہ ہماری انڈسٹری بولی وڈ کے مقابلے میں چھوٹی ضرور ہے لیکن معیار کے اعتبار سے پاکستانی شوبز انڈسٹری کسی سے بھی پیچھے نہیں ہے۔ خاص طور پر پاکستانی ڈرامے آج بھی بھارتی ڈراموں کے آگے زیادہ پسند کئے جاتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ اب بھارتی کمپنیاں پاکستانی فلم سازوں اور اداکاروں کو لے کر ڈیجیٹل میڈیم کے لیے ویب سیریز بھی بنار ہی ہیں۔ شوبز کی ترقی سے اس کے ساتھ وابستہ دیگر روزگار بھی پھل پھول رہے ہیں۔ تاہم سب سے زیادہ فائدہ پاکستانی اداکاروں کو ہو رہا ہے کہ جن کے معاوضے بھی اب کئی گنا بڑھ چکے ہیں۔ جتنا بڑا فنکار، اتنا ہی بڑا اس کا معاوضہ بھی ہے۔ معاضوں کا تعین یوں تو فنکاروں کی مقبولیت کی بنا پر ہوتا ہے، تاہم اب بہت سے فنکاروں نے اپنے کام کے معاوضے کا بھاؤ تاؤ کرنے کے لیے منیجرز بھی رکھ لیے ہیں۔ معاوضے کے تمام تر معاملات کو خفیہ رکھا جاتا ہے اور اس کی خبر ساتھی فنکاروں کو بھی نہیں ہوتی۔ تاہم انڈسٹری میں کوئی بات بھی چھپی نہیں رہتی۔ اپنا معاوضہ بڑھانے کی خاطر فنکار بھی اس چیز پر نظر رکھتے ہیں کہ ان کے دیگر ساتھی فنکار کتنا معاوضہ وصول کر رہے ہیں۔ گو کہ فنکاروں کے معاوضے کے حوالے سے مصدقہ خبر ملنا مشکل کام ہے۔ تاہم مختلف ذرائع سے ملنے والی خبروں کو جمع کر کے ہم قارئین کو ان پاکستانی فنکاروں کے بھاری معاوضوں کی دلچسپ معلومات فراہم کر رہے ہیں کہ جو اس وقت مقبولیت میں سب سے آگے ہیں۔  آج کل پاکستانی ہیروز میں سب سے زیادہ مقبول فواد خان ہیں، جن کی شہرت دنیا بھر میں ہے اور سرحد پار بھی ان کے بہت چرچے ہیں۔ کہا جاتا ہے کہ بھارت میں اگر انتہا پسند پاکستانی فنکاروں کو کام کرنے سے نہ روکیں تو فواد خان اس وقت بھارت میں سب سے زیادہ مصروف پاکستانی ہیرو بن جائیں گے۔ فواد خان پہلے پاکستانی اداکار بھی ہیں جنہیں بھارت میں بہترین نئے اداکار کا فلم فیئر ایوارڈ بھی حاصل ہوا تھا۔ بہت کم لوگ یہ بات جانتے ہیں کہ فواد خان کو بھارتی فلم ساز راج کمار ہیرانی نے اپنی فلم ’’پی کے‘‘ میں ’’سرفراز‘‘ کے کردار کی پیشکش بھی کی تھی۔ تاہم فواد نے یہ آفر اپنے بھارتی فلم ساز دوست کرن جوہر کی فلم ’’کپور اینڈ سنز‘‘ کے لیے ٹھکرا دی تھی۔ فواد خان کافی عرصے سے ڈراموں میں دکھائی نہیں دے رہے۔ تاہم ڈرامہ سیریل ’’ہم سفر‘‘(2011ء) فواد خان نے ایک قسط کا معاوضہ دو سے تین لاکھ روپے وصول کرنا شروع کردیا تھا۔ ہماری اطلاعات کے مطابق گزشتہ دنوں فواد خان نے سپر اسٹار ماہرہ خان کے ساتھ ایک ڈرامہ شوٹ کروایا ہے جس کی ہدایات سرمد کھوسٹ نے ہی دی ہیں جو کہ ’’ہم سفر‘‘ کے بھی ڈائریکٹر تھے۔ تاہم اس ڈرامے کو فی الحال نشر نہیں کیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق فواد خان نے اس ڈرامے میں کام کرنے کے لیے ایک قسط کا معاوضہ پانچ سے چھ لاکھ روپے وصول کیا ہے۔ خوبرو اداکارہ ماہرہ خان بھی اس وقت پاکستان کی سب سے مقبول اداکارہ ہیں جن کا معاوضہ بھی سب سے زیادہ ہی ہے۔ ماہرہ خان نے بھی اس ڈرامے میں کام کرنے کا معاوضہ پانچ سے چھ لاکھ قسط کے حساب سے وصول کیا ہے۔ ماہرہ خان بھی طویل عرصے سے چھوٹی اسکرین پر ڈراموں میں دکھائی نہیں دی ہیں۔ ہماری اطلاعات کے مطابق ماہرہ خان اور فواد خان کا نیا ڈرامہ اس لیے نشر نہیں کیا گیا ہے کیوں کہ ان دونوں کی فلمیں سینما گھروں کی زینت بن رہی ہیں۔ خاص طور پر ماہرہ خان کی فلمیں تو دھڑا دھڑ سینما گھروں میں سج رہی ہیں۔ فلم’’دی لیجنڈز آف مولا جٹ‘‘ میں رواں برس ماہرہ خان اور فواد خان ایک ساتھ جلوہ گر ہونے والے ہیں۔ عیدالفطر پر ریلیز ہونے والی اس فلم کا سب کو بے چینی سے انتظار ہے۔ ماہرہ خان اور فواد خان ڈراموں سے زیادہ معاوضہ فلموں اور اشتہاری مہم سے کما رہے ہیں۔ ذرائع کہتے ہیں کہ دونوں ہی فنکار ٹی وی اشتہارات اور ایک فلم کے معاوضے کی مد میں 30 سے 50 لاکھ روپے وصول کر رہے ہیں۔ ماہرہ خان کی رواں برس ایک نہیں بلکہ تین فلمیں ریلیز ہوں گی اور وہ درجنوں اشتہارات میں جلوے بکھیرتی نظر آتی ہیں۔ دوسری جانب فواد خان ایک بڑے برانڈ کا میوزک شو بھی جج کر رہے ہیں جس کے معاوضے کے حوالے سے معلومات انتہائی خفیہ رکھی گئی ہیں۔ یعنی اس وقت ماہرہ اور فواد کی چاروں انگلیاں گھی میں اور سر کڑھائی میں ہے۔  لیجنڈ فلم ساز ریاض شاہد اور اپنے وقت کی مقبول اداکارہ نیلو جی کے بیٹے شان شاہد بلا شبہ پاکستان فلم انڈسٹری کے سپر اسٹار ہیں۔ شان کی یہ خاصیت ہے کہ چاہے وہ پنجابی فلم میں جلوہ گر ہوں یا ’’وار‘‘ جیسی نئے دور میں فلم میں ایکشن دکھائیں، شان کی ’’ہیرو پنتی‘‘ کبھی کم نہیں ہوتی۔ یہی وجہ ہے کہ شان آج بھی اپنے ایک پروجیکٹ کا معاوضہ 40 لاکھ سے50 لاکھ کے درمیان وصول کرتے ہیں۔ ایک زمانے میں شان نے مارننگ شو کی میزبانی شروع کی تھی اور اس شو کیلئے انہوں نے مہینے میں 16 شوز کا معاوضہ 50 لاکھ روپے وصول کیا تھا۔  ایور گرین ہیرو فیصل قریشی پاکستانی ڈراموں کی جان ہیں۔ فیصل ایک مارننگ شو کی میزبانی بھی کرتے ہیں جبکہ رواں برس وہ سلور اسکرین پر بھی واپسی کرنے والے ہیں۔ ذرائع کہتے ہیں کہ فیصل قریشی ایک پروجیکٹ کے 25 سے 30 لاکھ روپے معاوضہ وصول کرتے ہیں۔ تاہم اگر پروجیکٹ بڑا ہو تو فیصل اپنے معاوضے میں اس کے حساب سے بھی تبدیلی کرلیتے ہیں۔  ماڈل و اداکار میکال ذوالفقار پاکستانی ڈراموں اور فلموں کے ساتھ کئی بولی وڈ فلموں میں بھی کام کر چکے ہیں۔ میکال ایک پروجیکٹ کے لیے 15 سے 20 لاکھ روپے تک معاوضہ وصول کر رہے ہیں۔ میکال فلموں اور ڈراموں دونوں میں ہی کام کرتے ہیں اور ٹی وی اشتہارات بھی ان کی آمدنی کا ذریعہ ہیں۔